اعلی درجے کی تلاش
کا
9867
ظاہر کرنے کی تاریخ: 2009/04/19
 
سائٹ کے کوڈ fa1856 کوڈ پرائیویسی سٹیٹمنٹ 4781
سوال کا خلاصہ
من پسند لڑکی سے ازدواج کرنے کی رضامندی کو اعلان کرنے کا کونسا طریقه صیحح هے؟
سوال
میں ایک 19 ساله لڑکا هوں ـ لوگوں کے درمیان ایک مومن شخص کے عنوان سے مشهور هوں اور لوگ میری عزت کرتے هیں ـ لیکن ایک مدت سے میں ایک لڑکی کا عاشق هوگیا هوں، جو بهت هی مومنه هے ـ میں اس کے ساتھـ شادی کرنا چاهتا هوں لیکن میرے حالات مساعد نهیں هیں، یعنی میں نهیں چاهتا هوں که میری والده کو اس کا علم هو جائے چونکه میری والده کهتی هیں که مجھے 28 سال کی عمر میں شادی کرنی چاهئے ـ یهاں پر میرا سوال یه هے که میں اس لڑکی کو بالواسطه طورپر سمجھانا چاهتا هوں که میں اس کے ساتھـ ازدواج کرنا چاهتا هوں، کیا میں اس کے ساتھـ بات کرسکتا هوں اور اسے کهه سکتا هوں که وه منتظر رهے تاکه میں اس کی خوست گاری کے لئے جاوں چونکه هم ایک هی جگه پر کام کرتے هیں اس لئے نهیں چاهتا هوں که همارے درمیان کسی قسم کا اختلاف پیدا هوجائے اور بے احترامی کا سبب بنےـ اگر اس نے مجھے انکار کیا تو کیا پھر بھی میں اسے کهوں گا که میرا انتظار کرے تاکه خواست گاری کے لئے جاوں ؟ یا آپ کی نظر میں کوئی اور راسته هے که میں اسے یه سمجھا دوں که میں مذاق نهیں کرتا هوں بلکه سمجھـ لے که میری نیت کیا هے ـ میں کیسے سمجھـ سکتا هوں که وه مجھے پسند کرتی هے یا نه ؟ میں اس سلسله میں اپنے رشته داروں اور دوستوں سے مدد حاصل کرنا چاهتا هوں که صرف وه طریقه بتائے جس سے میں خود استفاده کرسکوں ـ
ایک مختصر

ازدواج ایک انتهائی مقدس اور اهم مسئله هے انسان کی انفرادی و اجتماعی زندگی میں اس کے بهت سے مثبت اثرات هیں که ان میں سے ایک انسان کی فطری ضرورتوں کو پور کرنا هے، که خالق کائنات نے هر مرد و زن میں اسے قرار دیا هے تاکه ایک دوسرے کی ضرورتوں کو پورا کرسکیں ـ اسی لحاظ سے ازدواج کی کافی سفارش کی گئی هے اورائمه اطهار علیهم السلام نے اس کے ضروری طریقه کار بیان فرمائے هیں که ان پر عمل کرنا طرفین کے لئے خوشحال زندگی میسر هونے اور معاشره کے سالم هونے کا سبب بن جاتا هےـ اس بنا پر جو بھی لڑکا یا لڑکی اس میدان میں قدم رکھنا چاهیں ، انھیں مکتب اسلام کی تعلیمات اور دستورات کو مدنظر رکھنا چاهئے ـ دین کے دستورات میں سے ایک یه هے که تمام مسائل میں جو چیز آپ کے لئے اتهام کا سبب بنے اس سے پرهیز کیجئے ـ[1]

چونکه ازدواج کے مختلف پهلو هیں، ان میں سے ایک پهلو خاندان اور افراد کی عزت، ناموس اور حیثیت کا مسئله هے، اس بنا پر هر جهت سے احتیاط کی جانی جاهئے ـ اس لئے آپ جس لڑکی کو پسند کرتے هو اور اسے اپنا شریک حیات بنانا چاهتے هو اس کے سامنے ازدواج کی تجویز پیش کرسکتے هیں لیکن یه کام اس صورت میں انجام پانا چاهئے که طرفین میں سے کوئی بھی اتهام کا شکار نه هوجائے ـ آپ کیوں اس مقدس امر کو مخفی رکھـ کر ایک انفرادی اور اجتماعی مشکل میں تبدیل کرنا چاهتے هیں؟ اگر آپ کے ماں باپ آپ کے ازدواج کی مخالفت کرتے هیں اور قابل قبول منطقی دلیل نهیں رکھتے هیں تو آپ کو اپنے دوسرے رشته داروں سے مدد لینی چاهئے، اگر آپ کے تمام رشته دار اس امر کے مخالف هیں تو اپنے محله کے بزرگوں، مثال کے طور پر محله کے روحانی، استاد، معلم، اپنے افسر اور دوستوں سے مدد حاصل کرسکتے هیں، بهر حال ازدواج جیسے مقدس امر کو مخفی رکھنا پاک انسانوں کو بھی اتهام سے دوچار کرسکتا هے اور اس کی شیرینی کو تلخی میں تبدیل کرسکتا هے ـ



 [1]  ِ بحارالأنوار، ج72، ص 90. أَمِیرُ الْمُؤْمِنِینَ (ع) عِنْدَ وَفَاتِهِ: إِیَّاکَ وَ مَوَاطِنَ التُّهَمَةِ وَ الْمَجْلِسَ الْمَظْنُونَ بِهِ السُّوءُ فَإِنَّ قَرِینَ السَّوْءِ یَغُرُّ جَلِیسَهُ.

دیگر زبانوں میں (ق) ترجمہ
تبصرے
تبصرے کی تعداد 0
براہ مہربانی قیمت درج کریں
مثال کے طور پر : Yourname@YourDomane.ext
براہ مہربانی قیمت درج کریں
براہ مہربانی قیمت درج کریں

زمرہ جات

بے ترتیب سوالات

ڈاؤن لوڈ، اتارنا